فیٹف گرے لسٹ: اہداف کے حصول میں پاکستان کی بڑی کامیابی

پاکستان نے فیٹف کی گرے لسٹ سے نکلنے کیلئے اطمینان بخش اقدامات کئے ہیں

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (فیٹف) کے ذیلی ادارے ایشیا پیسفک گروپ نے پاکستان کے لیے مشکل ترین محاذوں پرکامیابی کا اعتراف کیا ہے، 40 اہداف میں سے 39 میں پاکستان کی مثبت کارکردگی رہی ہے۔

بھارت فنانشل ایکشن ٹاسک فورس فیٹف کی ذیلی تنظیم ایشیا پیسفک گروپ کے چیئر مین کی حیثیت سے اپنی خدمات دے رہا ہے، بھارت  کی جانب سے پاکستان کے خلاف مسلسل  منفی پراپیگنڈا ور لابنگ  جاری ہے  جس میں بے بنیاد الزامات اور جھوٹی خبروں کا سہارا لیا جاتا ہے جس کے باعث پاکستان کو فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے اہداف پر کارکردگی دکھانے کے باوجود ایشیا پیسفک گروپ کو مطمئن کرنے میں بڑی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی ذیلی تنظیم ایشیاء پیسیفک گروپ نے 2021 تک کی کارکرگی کا جائزہ لیتے ہوئے پاکستان کو دیئے گئے اہداف پر کارکردگی رپورٹ جاری کر دی ہے، جس میں پاکستان کی کارکردگی کو اطمینان بخش اور عالمی معیار کے مطابق قرار دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

بھارت کا پاکستان کے خلاف ایک اور سازش کا اعتراف

رپورٹ کے مطابق پاکستان کو دیے گئے  40 اہداف میں سے  39 اہداف میں پاکستان نے مثبت پیش رفت کی ہے جبکہ صرف ایک  ہد ف میں کارکردگی اطمینان بخش نہیں ہے ،  پاکستان پوسٹ کے  مالیاتی اُمور اس سطح پر دستاویزی نہیں کیا گیا جس کی ضرورت تھی، ساتھ ہی پاکستان میں پراپرٹی میں مشکوک سرمائے کو رپورٹ کرنے  کے معاملے پر بھی بڑی پیشرفت نہیں ہوئی ۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ  پاکستان نے انسداد منی لانڈرنگ کے خلاف اطمینان بخش اقدامات کئے ہیں ،  پاکستان نے انسداد منی لانڈرنگ کے لیے بہتر قوانین بنائے اور عالمی معیارکے مطابق انسداد  منی لانڈرنگ قوانین میں ترامیم کی گئیں۔

رپورٹ کے مطابق مختلف اداروں اور خاص طور پر کارپوریٹ سیکٹرمیں کارکردگی بہتر دکھائی گئی ہے۔ سیکیورٹی اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان نے مقررہ اہداف میں بہتر کارکردگی پیش  کی ہے۔

رپورٹ کے مطابق  پاکستان پوسٹ کو اپ گریڈ کرنے میں خاطر خواہ کامیابی نہیں ہوئی، پاکستان پوسٹ کے مالیاتی امور کو دستاویزی بنانے کی ضرورت ہے، پراپرٹی میں مشکوک سرمایہ کاری اب تک کوئی خاطر خواہ رپورٹنگ نہیں ہوئی۔  پراپرٹی میں مشکوک سرمایہ کاری کے خلاف اقدامات کی ضرورت ہے پاکستان کو اس سلسلے میں فروری 2022 تک پاکستان کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا۔

Facebook Comments Box