بلوچ طلباء ہراسگی کیس: چیف جسٹس اطہر من اللہ نے بڑا حکم دے دیا

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سردار اختر مینگل کو بلوچ طلباء کی ہراسگی روکنے سے متعلق کمیشن کا سربراہ مقرر کرتے ہوئے حکومت کو اختر مینگل کو کنوینئر مقرر کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کرنے کا حکم دے دیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے بلوچ طلباء کی ہراسگی کے معاملے پر بلوچستان نیشنل پارٹی عوامی کے سربراہ سردار اختر مینگل کو کمیشن کا سربراہ مقرر کردیا اور حکومت کو ہدایت کی ہے کہ کمیشن کے سربراہ کی تقرری کا نوٹیفکیشن تین روز میں جاری کیا جائے جب کہ کمیشن ایک ماہ میں رپورٹ پیش کرے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیف جسٹس اطہر من اللہ نے بلوچ طلباء کو ہراساں کرنے سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ بلوچ طلباء کی جانب سے ایمان مزاری اور وفاق کی جانب سے ایڈیشنل اٹارنی جنرل منور اقبال  پیش ہوئے۔

یہ بھی پڑھیے

جج کو دھمکی دینے کے مقدمے میں عمران خان کی عبوری ضمانت قبل از گرفتاری منظور

توڑ پھوڑ کیس میں عمران کی عبوری ضمانت میں 13 اکتوبر تک توسیع

عدالت عالیہ کا کہنا تھا کہ بلوچ طلباء کو ہراساں کرنے کا معاملہ بہت حساس نوعیت کا ہے، یہ طلباء تعلیم کے لئے آتے ہیں۔ بلوچ طلباء کیوں غیرمحفوظ ہیں، اس پر علیحدہ حکم جاری کیا جائے گا۔

عدالت کو بتایا گیا کہ چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی نے کمیشن کی سربراہی کرنے سے معذرت کرلی ہے جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ سردار اختر مینگل کو کیوں نہ کمیشن میں شامل کیا جائے۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ کامران مرتضیٰ ایڈووکیٹ کمیشن کےلیے دستیاب ہیں تاہم عدالت جو بھی حکم دے، حکومت کو کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔

جس پر چیف جسٹس نے سردار اختر مینگل کو بلوچ طلباء کی ہراسگی روکنے سے متعلق کمیشن کا سربراہ مقرر کردیا اور حکومت کو تین روز میں اختر مینگل کو کمیشن کا کنوینئر مقرر کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کرنے کا حکم دیا۔

عدالت عالیہ کا کہنا تھاکہ کمیشن ایک ماہ میں بلوچ طلباء کی ہراسگی روکنے سے متعلق رپورٹ پیش کرے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے دریافت کیا کہ کمیشن کا سیکریٹریٹ کہاں ہوگا، جس پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ آپ نے آخری بار انسانی حقوق کی وزارت کا کہا تھا، تاہم عدالت کا کہنا تھاکہ بلوچ طلباء کی ہراسگی روکنے سے متعلق کمیشن کا سیکرٹیریٹ سینٹ میں قائم کیا جائے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے بلوچ طلبا کے وکیل کو ہدایت کی کہ بلوچ طلباء کی شکایات تحریری صورت میں سینیٹ سیکرٹریٹ میں قائم کمیشن میں جمع کروائیں۔

مقدمہ کی مزید سماعت 7 نومبر تک ملتوی کردی گئی۔

متعلقہ تحاریر