پشاور ہائی کورٹ میں گورنر کےپی کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت کارروائی کی درخواست دائر

وکیل معظم بٹ کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ کےپی اسمبلی کی تحلیل کو 90 روز گزر گئے مگر گورنر کی جانب سے انتخابات کی تاریخ نہیں دی جارہی۔

خیبر پختونخوا کے گورنر غلام علی خان کو عہدے سے ہٹانے کے لیے پشاور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی ہے۔

پشاور ہائی کورٹ میں دائر کی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ گورنر کےپی نے اپنے عہدے کی پاسداری نہیں کی ، اس لیے انہیں ان کے عہدے سے ہٹایا جائے۔

یہ بھی پڑھیے

وفاق نے 2 ارب روپے جاری کردیے،خیبرپختونخوا میں  صحت کارڈ کی سہولت بحال

خیبر پختونخوا میں انتخابات کا کیس: پشاور ہائی کورٹ نے سماعت 4 مئی تک ملتوی کردی

ہائی کورٹ کے وکیل معظم بٹ کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ گورنر نے خیبر پختونخوا کی اسمبلی تحلیل ہونے کے 90 دن کے اندر انتخابات کرانے کی تاریخ نہیں دی۔

پشاور ہائی کورٹ میں دائر درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ گورنر غلام علی خان کے خلاف آرٹیکل 6 کے تحت کارروائی کی جائے۔

وکیل معظم بٹ نے اپنی درخواست میں پشاور ہائی کورٹ سے مزید استدعا کی ہے کہ گورنر غلام خان کو عہدے سے ہٹا کر صدر مملکت کو قائم مقام گورنر نامزد کیا جائے۔

درخواست میں موقف اختیار گیا ہے کہ عدالت عالیہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کو کےپی میں انتخابات کے انعقاد کا بھی حکم دے۔ جبکہ نگراں حکومت نے بھی 90 روز گزرنے کے بعد اپنا کام جاری رکھا ہوا ہے اس لیے عدالت نگراں سیٹ اپ تبدیل کرنے کا بھی حکم دے۔

متعلقہ تحاریر