خیبر پختون خوا کے لوگوں کی محبت نسوار بھی مہنگی ہو گئی

معاہدے کے تحت مہنگی نسوار بیچنے والے کو 50 ہزار روپے جرمانہ کیا جائے گا۔

خیبر پختون خوا (کے پی کے) کے مختلف اضلاع میں نسوار بھی مہنگی ہو گئی ہے۔ 10 روپے والی پُڑیا 20 روپے میں فروخت ہونے لگی ہے۔

دیر کے نسوار فروشوں نے معاہدے کے تحت نسوار کی قیمتوں کا تعین کر دیا ہے۔ خلاف ورزی کے مرتکب دکانداروں پر 50 ہزار روپے جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیے

کے پی کے بلین ٹرین سونامی، عالمی سطح پر بھی پذیرائی

ملک میں جاری مہنگائی نے نسوار کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ خیبر پختون خوا میں نسوار کی قیمتیں دگنی ہو گئیں ہیں۔ 10 روپے والی پڑیا 20 روپے میں فروخت ہونے لگی ہے۔ دیر کے نسوار فروشوں نے معاہدے کے تحت نسوار کی قیمتوں کا تعین  کرلیا۔ دکاندار 60 سے 70 گرام کی پڑیا 20 روپے میں  فروخت کرنے کے پابند ہونگے۔

50 روپے میں نسوار کی 3، سو روپے میں 7 جبکہ 200 روپے میں 14 پڑیاں فروخت کی جائیں گی۔ معاہدے کی خلاف ورزی کے مرتکب دکانداروں کو 50 ہزار روپے جرمانہ کیا جائےگا۔

کے پی کے ضلع دیر کے نسوار بیچنے والوں نے نظر ثانی شدہ نرخوں کے حوالے سے ایک معاہدے پر دستخط کیے اور خلاف ورزی کرنے والوں پر 50 ہزار روپے جرمانہ عائد کیا۔

سرکاری اعدادوشمار بتاتے ہیں کہ خیبر پختون خوا میں 70 فیصد سے زائد لوگ نسوار استعمال کرتے ہیں، اور صوبے میں نسوار کی مختلف اقسام کی فروخت 6 ارب روپے سے زیادہ ہے۔

صارفین نے پی ٹی آئی کی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے ہر چیز کی قیمت میں اضافہ کردیا ہے جس لامحالہ اثر ان کی روز مرہ کی استعمال میں آنے والی نسوار بھی مہنگی ہو گئی ہے۔

Facebook Comments Box