پی ٹی آئی کا پنجاب حکومت اور پولیس پر عدالتی احکامات کی خلاف ورزی کا الزام

پی ٹی آئی کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ سے ایک پیغام میں کہا گیا کہ لاہور ہائیکورٹ نے 5 مئی بروز جمعہ عمران خان کا بیان ریکارڈ کرنے کا حکم دیا تاہم پنجاب پولیس نے پارٹی چیئرمین کی لاہور میں عدم موجودگی کے باوجود آج ہی نوٹس جاری کردیا

پاکستان تحریک انصاف نے پنجاب کی نگراں حکومت اور صوبائی پولیس پر الزام عائد کیا ہے کہ انہوں نے لاہور ہائی کورٹ کے پانچ رکنی بنچ کے احکامات کو ہوا میں اڑادیا ہے ۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی )کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ سے ایک پیغام میں پنجاب کی نگراں حکومت اور پولیس پر عدالتی احکامات کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا ہے ۔

یہ بھی پڑھیے

نون لیگی رہنماؤں نے عمران خان کو عدالتوں سے مفرور شاطر ملزم قرار دے دیا

پی ٹی آئی کے ٹوئٹر ہینڈل سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہےکہ پنجاب کی غیرقانونی کٹھ پتلی نگراں حکومت اور پولیس کا جاری نوٹس عدالتی حکم کی کھلم کھلا توہین ہے۔

تحریک انصاف کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے 5 رکنی بینچ نے 5 مئی کو عمران خان کا بیان ریکارڈ کرنے کا حکم دیا تھا تاہم پولیس نے بیان ریکارڈ کیلئے آج ہی نوٹس جاری کردیا ۔

پی ٹی آئی نے الزام عائد کیا کہ پارٹی چیئرمین  عمران خان کی لاہور میں عدم موجودگی میں سازشیوں نے ایک  اور واردات  برپا کی اور عدالتی حکم خلاف نوٹس جاری کردیا ہے۔

پی ٹی آئی کے مطابق عدالت نے جمعہ کو عمران خان کا بیان ریکارڈ کرنے کا حکم دیا تاہم عمران خان لاہور میں عدم موجودگی آج 3 بجے زمان پارک آنے کا نوٹس نکال دیا  ہے ۔

پی ٹی آئی نے الزام عائد کیا کہ اس سے قبل اسلام آباد ہائیکورٹ پیشی کے دوران نگراںحکومت اورپولیس نے چیئرمین عمران خان کی رہائشگاہ پر حملہ کیا ، توڑ پھوڑ اور لوٹ مار کی۔

متعلقہ تحاریر