ڈاکٹر یاسمین راشد کی بعداز گرفتاری درخواست ضمانت عدم پیروی پر مسترد کردی گئی

لاہورکی انسداد دہشت گردی کی عدالت نے 9 مئی کو فوجی تنصیبات پر حملوں سے متعلق کیس میں یاسمین راشدکی درخواست ضمانت مستردکرتے ہوئے مزید 14 روز کے لیے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا

لاہور کی انسداد دہشت گردی (اے ٹی سی ) عدالت نے  تحریک انصاف کی رہنما و سابق صوبائی وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کی درخواست ضمانت مسترد کردی گئی ۔

لاہور کی انسداد دہشتگردی کی عدالت نے 9 مئی کو فوجی تنصیبات پر حملوں سے متعلق کیس میں تحریک انصاف  کی رہنما یاسمین راشدکی درخواست ضمانت مستردکردی۔

یہ بھی پڑھیے

پولیس نے 9 مئی کے واقعات میں استعمال یاسمین راشد کا موبائل اور گاڑی برآمد کرلی

پی ٹی آئی کی رہنما سابق وزیر ڈاکٹر یاسمین راشد نے لاہور کے سرور روڈ پولیس اسٹیشن میں اپنے خلاف درج مقدمے میں بعداز گرفتاری ضمانت کی درخواست دائر کی تھی۔

عدالت نے یاسمین راشد کی درخواست ضمانت بعد ازگرفتاری عدم پیروی کی بنیاد پر ضمانت مسترد کی، انسداددہشتگردی عدالت کی ایڈمن جج عبہرگل خان نے سماعت کی۔

سابق  صوبائی  وزیر صحت پنجاب  یاسمین راشد کے خلاف تھانہ سرور روڈ پولیس نے شیرپاؤ پل پرسڑک بلاک کرکے اداروں کیخلاف ہرزہ سرائی کرنے  کا مقدمہ درج کیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد کو مذکورہ کیس میں  14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر  جیل میں ہیں ،جنہیں آج ریمانڈ  ختم ہونے پر انسداد دہشتگردی کی عدالت میں پیش کیا گیا تھا ۔

یہ بھی پڑھیے

پنجاب حکومت کی ڈاکٹر یاسمین راشد کی بریت لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کردی

انسداد دہشت گردی کی ایڈمن جج عبہر گل خان نے عدم پیروی پر سابق صوبائی وزیر کی درخواست ضمانت  مسترد کرتے ہوئےجوڈیشل ریمانڈ میں 14 روزہ توسیع کردی ۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف سینٹرل پنجاب کی صدر،سابق صوبائی وزیر یاسمین راشد کو مینٹیننس آف پبلک آرڈر (ایم پی او) سیکشن تھری کے تحت حراست میں لیا گیا تھا۔

متعلقہ تحاریر