پانی و بجلی سے محروم عوام پر پیپلزپارٹی کے کارکنوں کی فائرنگ، پولیس نے مظاہرین کو ہی گرفتار کرلیا

شہر قائد کے علاقے لیاری کے مکین پانی و بجلی کی عدم فراہمی پر پیپلز پارٹی ساؤتھ کے صدر خلیل ہوت سے ملاقات کیلئے ان کے دفتر پہنچے تو پی پی کے کارکنوں نے ان پر فائرنگ کردی، مظاہرین نے پی پی دفتر کو جائے عبرت بنادیا جبکہ پولیس نے مظاہرین کو ہی گرفتار کرلیا

شہر قائد کے مکین پانی اور بجلی کی عدم فراہمی پر مشتعل ہوگئے۔ لیاری کے عوام نے حکمران جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کے دفتر پر ہلہ بول کر توڑ پھوڑ کر ڈالی ۔

شہرقائد کے علاقے لیاری میں مشتعل عوام نے پانی و بجلی کی عدم فراہمی پر حکمران جماعت پیپلز پارٹی کے دفتر پر ہلہ بول دیا اور دفتر میں موجود افراد پر تشدد بھی کیا ۔

یہ بھی پڑھیے

کراچی میں پانی کی قلت کا مسئلہ سنگین

پولیس حکام کے مطابق بغدادی کی حدود میں پانی و بجلی   کی عدم فراہمی پر احتجاج کے دوران چندافراد نے پیپلزپارٹی کے دفتر پر حملہ کرکے توڑ پھوڑ کی ہے ۔

سینئرسپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی ) سٹی کا کہنا ہے کہ پیپلزپارٹی ساؤتھ  کے دفتر میں توڑ پھوڑ کرنے والے 14 افراد کو گرفتار کرکے انہیں تھانے منتقل کردیا ۔

مظاہرین نے دعویٰ کیا ہے کہ پیپلز پارٹی ساؤتھ کے صدر خلیل ہوت سے ملاقات کیلئے ان کے دفتر پہنچے تو پی پی کے کارکنوں نے ان پر فائرنگ کردی تھی ۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ گزشتہ 9 ماہ سے علاقے میں پانی کی فراہمی مکمل بند ہے جبکہ ہم نے پی پی ساؤتھ کے صدر خلیل ہوت سے رابطہ کیا تو ہمیں ملنے نہیں دیا ۔

یہ بھی پڑھیے

کراچی میں پانی چوری کے خلاف نیب متحرک

مظاہرین نے بتایا کہ ہم پیپلزپارٹی کے دفتر پہنچے تو ہم پر فائرنگ کی گئی تاہم خود قسمتی سے کوئی جانی نقصان ہیں ہوا جبکہ پولیس ہمارا مقدمہ درج نہیں کررہی ہے ۔

ایس ایس پی سٹی عارف عزیز نے کہا ہے کہ احتجاج کے دوران کچھ لوگ نے پیپلزپارٹی ساؤتھ کے دفتر میں توڑ پھوڑ کی اور وہاں پر موجود کارکنان پر بھی تشدد کیا۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ گرفتار مظاہرین کا تعلق پیپلز پارٹی سے ہے تاہم ایف آئی آر درج نہیں کی گئی ہے، واقعے میں ایک شخص زخمی بھی ہوا ہے ۔

متعلقہ تحاریر