عمران خان کے بعد اتحادی بھی نشانے پر، گجرات میں چوہدری پرویز الہٰی کے گھر چھاپہ

گجرات میں پولیس نے رات گئے سابق وزیراعلیٰ پنجاب کے گھر کنجاڑی ہاؤس چھاپہ مارا، بھاری نفری نے گھر کو گھیرے میں لیکر تلاشی لی، گھسے پٹے سیاستدان ایسی حرکتیں کرتے ہیں، پرویز الٰہی کا قانونی کارروائی کااعلان، چوہدری وجاہت کی گرفتاری کیلیے چھاپہ مارا تھا، پنجاب پولیس

سابق وزیراعظم اور تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے بعد ان کے اتحادی بھی حکومت کے نشانے پر آگئے۔پنجاب پولیس نے شیخ رشید کے بعد سابق وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی کی رہائش گاہ پر بھی چھاپہ مار دیا۔

گجرات میں پولیس نے رات گئے سابق وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی کے گھر کنجاڑی ہاؤس چھاپہ مارا۔بھاری نفری نے پرویز الہٰی کے گھر کو گھیرے میں لیکر تلاشی لی۔

یہ بھی پڑھیے

متروکہ وقف املاک بورڈ راولپنڈی نے شیخ رشید کی رہائشگاہ لال حویلی سیل کردی

لاہور ہائیکورٹ سے لال حویلی کو ڈی سیل کرنے کی درخواست مسترد

 نجی ٹی وی نے ذرائع  کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ   پولیس سیڑھیاں لگا کرکنجاڑی ہاؤس میں داخل ہوئی، پولیس کی جانب سے چوہدری پرویزالہٰی کے گھر کی حفاظت پر مامور ملازمین کو حراست میں لیا گیا ہے، پولیس پرویزالہٰی کے گھر کی تلاشی کے بعد واپس چلی گئی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پرویز الہیٰ گجرات والے گھر پر موجود نہیں تھے جبکہ مونس الہیٰ ملک سے باہر ہیں۔ذرائع کے مطابق پولیس کی جانب سے  اب تک پرویز الہٰی کے گھر پرچھاپے سے متعلق کوئی تفصیلات جاری نہیں کی گئی ہیں اور نہ ہی کسی قسم کی کوئی تردید یا تصدیق کی گئی ہے۔

چوہدری پرویز الٰہی کا کہنا ہے کہ چھاپے سے متعلق کچھ نہیں بتایا گیا، پولیس کی جانب سے ملازمین کی تلاشی لی گئی اور انہیں ہراساں کیا گیا۔

سابق وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا ہے کہ گھر پر چھاپے کے خلاف قانونی کارروائی کریں گے، گھسے پٹے سیاست دان ایسی حرکتیں کرتے ہیں، حکومت ہمیں پکڑنے کے بجائے دہشتگردوں کو پکڑے۔

چوہدری پرویز الہٰی کے صاحبزادے مونس الٰہی نے اپنے ٹوئٹ میں کہا ہے کہ کل رات پولیس نے ہمارے گجرات کے گھر پر ریڈ کی۔ نہ کوئی وارنٹ نہ کوئی کیس۔ پولیس کی 25 گاڑیوں کی تو سمجھ آتی ہے پر یہ ساتھ 2 کالے ویگو کیا کر رہے تھے؟ انڈین جاسوس ڈھونڈ رہے تھے ؟

دریں اثنا پنجاب پولیس نے چوہدری پرویز الہٰی کے گھر چھاپے کی وجہ بتادی۔پولیس کا کہنا ہے کہ پرویز الٰہی کے گھر چھاپہ چوہدری وجاہت کی گرفتاری کے لیے مارا گیا، چوہدری وجاہت حسین کے گھر پر نہ ہونے کے باعث پولیس تلاشی کے بعد واپس لوٹ گئی۔

پولیس کے مطابق چوہدری وجاہت حسین کے خلاف گجرات کے تھانا ککرالی میں مقدمہ درج ہے، تھانا ککرالی میں مقدمہ 16 فروری کو پولیس کی مدعیت میں درج کیا گیا تھا، 16 فروری کو کوٹلہ ارب علی خان سول اسپتال کے نام کی تبدیلی پر جھگڑا ہوا تھا، جھگڑے کے وقت چوہدری وجاہت کے بیٹے موسیٰ الہٰی بھی موقع پرموجود تھے۔

پولیس کا بتانا ہے کہ موسیٰ الہٰی اور چوہدری وجاہت کو پولیس تفتیش کے دوران مقدمے میں نامزد کیا گیا، موسیٰ الٰہی نے مقدمے میں عبوری ضمانت حاصل کر رکھی ہے جبکہ چوہدیر وجاہت حسین نے تاحال مقدمے میں ضمانت نہیں کرائی۔

دوسری جانب دو روز قبل ایف آئی اے اور پولیس کے ہاتھوں لال حویلی سیل کیے جانے کےبعد  اسلام آباد پولیس نے سابق وزیرداخلہ  شیخ رشید کو آج آبپارہ تھانے طلب کرلیا ہے۔

متعلقہ تحاریر