دہشتگردی سے نمٹنے کیلئے کل جماعتی کانفرنس: پی ٹی آئی باقاعدہ دعوت نامے کی منتظر

رہنما تحریک انصاف فواد چوہدری نے کہا ہے کہ اگر حکومت کی جانب سے اے پی سی میں شرکت کا باقاعدہ دعوت نامہ موصول ہوا تو شرکت کے حوالے سے مشاورت کریں گے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے ملک کو درپیش معاشی اور دہشتگردی کے چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مشترکہ حکمت عملی کے لیے آل پارٹیز کانفرنس طلب کرلی ہے اور اس کے لیے انہوں نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کو شرکت کی دعوت دی ، تاہم پی ٹی آئی کے سینئر رہنما فواد چوہدری نے کہا ہے کہ اے پی سی میں شرکت کےلیے باقاعدہ دعوت آئی تو شرکت کے حوالے سے مشاورت کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم شہباز شریف نے معاشی چیلنجز اور پشاور میں دہشتگردی کے بڑے واقعے کے بعد آل پارٹیز کانفرنس کال کرلی ہے جس کے لیے حکومت کی جانب سے پہلے 7 فروری کی تاریخ دی گئی تاہم اب وزیراعظم کی مصروفیات کے بعد یہ کانفرنس 9 فروری ہو گی۔

یہ بھی پڑھیے

مہنگائی پر قابو پانا صوبوں کی ذمہ داری ہے، مریم نواز نے وزیراعظم کو کلین چٹ دے دی

ایم کیو ایم کا 12 فروری کو بلدیاتی انتخابات کیخلاف فوارہ چوک میں دھرنے کا اعلان

9 فروری کو ہونے والے کانفرنس میں ملک کی تمام سیاسی جماعتوں کے سربراہ سمیت عمران خان کو بھی مدعو کیا گیا ہے ، تاہم پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما اور سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری نے باقاعدہ دعوت ملنے کی تردید کی ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام شیئر کرتے ہوئے فواد چوہدری نے لکھا ہے کہ ” شہباز شریف نے میڈیا پر دہشت گردی کے معاملے پر آل پارٹیز کانفرنس اور تحریک انصاف کو شمولیت کی دعوت دی، لیکن ابھی تک اس ضمن میں تحریک انصاف کو کوئی دعوت نامہ نہیں ملا، باقاعدہ دعوت نامہ ملا تو اس کانفرنس میں شرکت پر مشاورت کریں گے۔”

یاد رہے کہ گذشتہ دنوں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت سے انکار کرتے ہوئے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام شیئر کرتے ہوئے لکھا تھا کہ ”میں سازش اور ہارس ٹریڈنگ کے ذریعے قوم پر مسلط کردہ اس امپورٹڈ سرکار کو ہرگز تسلیم نہیں کرتا۔ 10 ماہ میں اس حکومت کے ہاتھوں معیشت کی تباہی، ننگی فسطائیت کے ذریعے جمہوریت کے قتل، قانون کی حکمرانی اور بنیادی حقوق کے خاتمے ، اور دہشت گردی کو اپنی ناک تلے پھیلنے کی اجازت دیے جانے پر نگاہ ڈالتا ہوں تو سوچتا ہوں کہ شہباز شریف اتنا بے شرم کیسے ہو سکتا ہے!”

متعلقہ تحاریر