پی ٹی آئی کا نیب ترمیمی بل سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا فیصلہ

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا نیب قوانین میں ترامیم حکومت نے ذاتی مفادات کے لیے کی ہیں جو کسی صورت قابل قبول نہیں۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین  اور سابق وزیراعظم عمران خان نے نیب ترمیمی بل  سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کر دیا۔اس حوالے سے رواں ہفتہ سپریم کورٹ سے رجوع کریں گے۔

چئیرمین  تحریک انصاف اور سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ حکومت نے نیب قانون میں ذاتی مفاد کے لئے ترمیم کی ہیں۔ان کا کہنا تھاکہ وہ  نیب ترامیم کو عدالت عظمٰی میں چیلنج کریں گے۔

یہ بھی پڑھیے

حمزہ شہباز ضمنی انتخابات میں دھاندلی کیلئے ڈی پی اوز پر دباؤ ڈال رہا ہے، قریشی کا الزام

 

عمران خان نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف نے26سال پہلے کرپشن کے خلاف تحریک شروع کی تھی، جب انصاف نہیں ہوتا تو کرپشن کی بیماری نظرآتی ہیں، اگرملک نے ترقی کرنی ہے تو ایسا صرف قانون کی حکمرانی سے ممکن ہے،ایساقانون جس میں حکمران سمیت کوئی بھی قانون سے بالاترنہ ہو۔ اگرملک میں ایک طبقہ قانون سے بالاتر ہوگا تو ملک کو اس سے بہت نقصان پہنچتا ہے اور اس کا کوئی مستقبل نہیں ہوتا۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں وسائل اور انصاف کی کمی ہے، ملک کے بڑے مجرموں کو قانون کے دائرے میں لانے تک ملک ترقی نہیں کرسکتا۔

عمران خان نے کہا کہ نیب کی حالیہ ترامیم ملک و قوم کی توہین ہے، امید ہے عدالت نیب ترامیم کا نوٹس لے گی۔ امپورٹڈ حکومت عوام کے لیے اقتدارمیں نہیں آئی۔

ان کا کہنا تھاکہ مسلم لیگ نواز کے لیڈر خرم دستگیر نے کہاکہ ان کی جماعت اس لئے حکومت میں آئی تاکہ عمران خان کو جیل میں ڈال سکے۔

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت اپنے کیسز ختم کرانے کے لئے اقتدارمیں آئی ہے۔یہ نہیں ہوسکتا کہ کسی کی ذات کے لیے قانون سازی کی جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ ترامیم کے بعد جعلی بینک اکاؤنٹس میں جو پیسہ آئے گا اب اکاؤنٹ ہولڈرز کی بجائےنیب کو ثابت کرنا پڑے گاکہ یہ غیر قانونی پیسہ ہے۔ دنیا میں وائٹ کالرکرائم پکڑنا مشکل ہوتا ہے، ترامیم کے بعد آمدن سے زائد اثاثوں میں کیس والے سارے بچ جائیں گے۔ پاناما میں چار مہنگے ترین فلیٹس سامنے آئے تھے، پاناما کے مہنگے فلیٹس کی اصل مالکہ مریم نوازتھیں، ترامیم کے بعد اب نوازشریف، مریم نواز پاک صاف ہو کر نکل جائیں گی۔

Facebook Comments Box