یوسین بولٹ کے بعد مارشل جیکب دنیا کے تیز ترین انسان قرار

ٹوکیو اولمپکس میں اطالوی کھلاڑی نے 100 میٹر کا فاصلہ 9.8 سکینڈز میں طے کیا ہے۔

ٹوکیو اولمپکس میں 100 میٹر ریس میں اٹلی کے ایتھلیٹ (کھلاڑی) مارشل جیکب نے کامیابی کے جھنڈے گاڑتے ہوئے مطلوبہ فاصلہ 9.8 سیکنڈز میں طے کرکے دنیا کے تیز رفتار انساان ہونے کا اعزاز حاصل کرلیا ہے، یوسین بولٹ نے 2009 کے اولمپکس مقابلوں میں 100 میٹر ریس کا فاصلہ 9.63 سکنڈز میں طے کیا تھا۔

100 میٹر ریس کے مقابلوں میں امریکی ایتھلیٹ نے دوسری پوزیشن حاصل کی ہے جبکہ کینیڈین کھلاڑی کا نمبر تیسرا رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

زمین کے بعد خلا سے بھی ٹوکیو اولمپکس کی نگرانی

مارشل جیکب 100 میٹر کی تیز ترین دوڑ جتینے والا تاریخ میں پہلا اطالوی کھلاڑی ہے۔ 100 میٹر کی ریس میں امریکی کھلاڑی فریڈ کرلی نے مقررہ فاصلہ 9.84 سیکنڈز جبکہ کینیڈا کے اینڈریو ڈی گراس نے 9.89 سیکنڈز میں طے کیا۔

جیت کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے مارشل جیکب کا کہنا تھا کہ یہ جیت میرے لیے ایک خواب کی مانند ہے، اس حیرت انگیز جیت کو بیان کے لیے میرے پاس الفاظ نہیں ہیں، تاہم اس بات کا اصل ادراک مجھے پانچ چھ سال بعد ہوگا۔

کھیلوں پر نظر رکھنے والے اسپورٹس جرنلسٹس کا کہنا ہے کہ دیکھنا یہ ہے کہ کیا مارشل جیکب اپنے زمانے کے مشہور ترین ایتھلیٹ یوسین بولٹ کا ریکارڈ توڑنے میں کامیاب ہوتے ہیں یا نہیں۔ کیونکہ یوسین بولٹ نے کھیلوں کے بڑے مقابلوں میں سونے کے 8 تمغے حاصل کررکھے ہیں۔

23 جولائی سے شروع ہونے والے ٹوکیو اولمپکس میں ابھی تک کے مقابلوں میں میڈلز کے اعتبار سے جاپان کی پوزیشن پہلی ہے۔ جاپان نے ابھی تک 25 میڈلز حاصل کیے ہیں جن میں 15 سونے کے ، 4 سلور اور 6 براؤنز میڈلز شامل ہیں۔

امریکا کی پوزیشن دوسری ہے۔ ابھی تک مقابلوں میں امریکا نے 38 میڈلز حاصل کیے ہیں جن میں 14 سونے کے ، 14 چاندی کے اور 10 کانسی کے تمغے شامل ہیں۔

ٹوکیو اولمپکس کے مقابلوں میں چین کی 29 میڈلز کے ساتھ تیسری پوزیشن ہے۔ چین نے ابھی تک مجموعی طور پر 29 میڈلز حاصل کیے ہیں جن میں سونے کے 14 ، 6 چاندی کے اور 9 کانسی کے تمغے شامل ہیں۔ آسٹریلوی کھلاڑی نے ابھی تک 8 سونے کے تمغے جیتے ہیں جبکہ روس کے طلائی تمغوں کی تعداد بھی 8 ہے۔

Facebook Comments Box