واجد اللہ نگری راکاپوشی سرکرنے والے دوسرےپاکستانی بن گئے  

واجد اللہ نگری نے راکاپوشی کو نئے راستے سے سر کیا ہے اس سے قبل راکا پوشی کو 1979 میں کرنل  شیر خان نے سر کیا تھا۔

پاکستانی کوہ پیما واجد اللہ نگری نے آٹھ ستمبر کی شام جمہوریہ چیک ریپبلک سے تعلق رکھنے والے دو ساتھی کوہ پیماؤں کے ہمراہ پاکستان کی بارہویں سب سے بلند ترین چوٹی راکاپوشی کو سرکرنے والے دوسرے پاکستانی ہونے کا اعزاز اپنے نام کرلیا۔

واجد اللہ نگری نے 7788 میٹر بلند چوٹی راکاپوشی کو نئے راستے سے سر کیا ہے اس سے قبل راکا پوشی پہاڑ 1979 میں پاکستان  سے تعلق رکھنے والے کرنال  شیر خان نے سر کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

کیا پاکستانی کوہ پیما ثمینہ بیگ کے ٹو سر کرپائیں گی؟

واضح رہے کہ کوہ قراقرم کے پہاڑی سلسلے میں شامل راکاپوشی پاکستان کے شمال میں واقع ہے جس کی بلندی 7788 میٹر ہے۔ راکا پوشی پاکستان کی بارہویں بلند ترین چوٹی جبکہ دنیا میں 27 ویں بلند ترین چوٹی ہےجس کو 1958 میں سب سے پہلے دو برطانوی کوہ پیما مائیک بینکس اور ٹام پیٹی نے سر کیاتھا جبکہ اس چوٹی کو سر کرنے کی کوشش میں اب تک دنیا بھر سے تعلق رکھنے والے متعدد کوہ پیما اپنی جان سے ہاتھ دھو چکے ہیں، گذشتہ 10 سالوں کے دوران پاکستان کے بارہویں بلند ترین چوٹی کو سرکرنے کی کوشش میں چلی اور برطانیہ سے تعلق رکھنے والے دو کوہ پیمااپنی جان سے گئے تھے۔

Facebook Comments Box