فاسٹ باؤلر عثمان خان شنواری نے اپنی موت کی خبروں کی تردید کردی

قومی کرکٹ ٹیم کے باؤلر نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ افسوس کرنے سے پہلے خبر کی تصدیق کرلیا کریں۔

گذشتہ روز کارپوریٹ لیگ کے دوران کھلاڑی ہارٹ اٹیک سے جاں بحق ہوگیا ، جس کی شناخت عثمان شنواری کے نام سے ہوئی ہے ، تاہم خبر جنگل کی آگ کی پھیل گئی کہ قومی ٹیم فاسٹ باؤلر عثمان شنواری ہارٹ اٹیک سے انتقال کر گئے ہیں ، جس کے بعد سوشل میڈیا پر اظہار افسوس کا ایک نہ تھمنے والا سلسلہ چل نکلا۔

برجر پینٹس اور فرائزلینڈ کے درمیان کھیلے جارہے میچ کے دوران کھلاڑی کے انتقال کا واقعہ پیش آیا۔ فیلڈنگ کے دوران کھلاڑی عثمان شنواری اچانک زمین پر گئے ، ساتھ کھلاڑیوں نے انہیں فوری طور پر اسپتال منتقل کیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے۔

یہ بھی پڑھیے

مالی مشکلات کے شکار دو پلیئرز نے ہاکی ٹیم سے استعفے دے دیئے

چوتھا ٹی ٹوئنٹی میچ: پاکستان نے انگلینڈ کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد شکست دے دی

سٹی 42 کے سپورٹس رپورٹر طاہر جمیل خان نے عثمان شنواری کی موت سے متعلق سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ” برجر پینٹس اور فرائز لینڈ کے میچ کے دوران عثمان شنواری دل کا دورہ پڑنے سے گر گئے اور انہیں فوری طور پر ہسپتال لایا گیا جہاں وہ جانبر نہ ہو سکے۔”

اس خبر کے بعد قومی ٹیم کے فاسٹ باؤلر عثمان شنواری کے گھر والوں سے اظہار تعزیت کے لیے فون کالز کا تانتا بندھ گیا ۔ تاہم لیفٹ آرم فاسٹ باؤلر عثمان خان شنواری نے اپنی موت کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام جاری کیا ہے کہ ” میں بالکل ٹھیک ہوں ، اللہ کا شکر ہے میری پوری فیملی کو لوگ فون کالز کر رہے ہیں ، میں بڑے احترام کے ساتھ ان سے درخواست کرتا ہوں کہ اتنی بڑی خبر کی پہلے تصدیق کرلیا کریں۔ شکریہ۔”

متعلقہ تحاریر