ایک شخص کو نوازنے کیلئے آئین کو روندا گیا، رمیز راجا

سابق چیئرمین پی سی بی رمیز راجا کا کہنا ہے کہ پاکستان پچھلے دروازوں سے جگہ بنانے کا کلچرل نافذ ہے، ایک شخص کو نوازنے کیلئے آئین کو روند کر جس طرح مجھے نکالا گیا وہ صحیح طریقہ نہیں تھا، پاکستان میں بدقسمتی سے تسلسل کو چلنے نہیں دیا جاتا ہے  جس سے نقصان ہوتا ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین رمیز راجا کا کہنا ہے کہ قومی کرکٹ میں میچ فکسنگ کا بھیانک وقت بھی آیا تھا تاہم میں تعلیم یافتہ ہونے کی وجہ سے اس لعنت سے محفوظ رہا ہوں۔

گورنمنٹ کالج یونیورسٹی (جی سی یونیورسٹی) میں طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے سابق چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ رمیز راجا نے کہا کہ تعلیم یافتہ ہونے کی وجہ سے میں میچ فکسنگ کی  لعنت سے محفوظ رہا ہوں۔

یہ بھی پڑھیے

پی سی بی نے ڈومیسٹک کرکٹ کا پرانا نظام بحال کردیا

لاہورکی جی سی یونیورسٹی میں طلبہ سے خطاب میں رمیز راجا کا کہنا تھا کہ ہمارے ملک میں  پچھلے دروازوں سے جگہ بنانے کا کلچرل نافذ ہے۔ آئین توڑ کر ایک بندے کو نوازنے کے لیے شب خون مارا گیا ۔

رمیز راجا نے کہا کہ میں یہاں اپنا کیس لڑنے نہیں آیا ہوں مگر مجھے جس طرح پی سی بی سے نکالا گیا وہ اچھا نہیں ہوا۔ پاکستان میں بدقسمتی سے تسلسل کو چلنے نہیں دیا جاتا ہے جس سے نقصان ہوتا ہے ۔

رمیز راجا نے کہا کہ اسپورٹس میں آگے بڑھنے کا سلسلہ اچانک  ختم کرنے سے نقصان ہورہا ہے مگر تسلسل ٹوٹنے کے باوجود بابراعظم کی ٹیم لڑکھڑاتی نہیں ہے اور یہ انہوں نے میدان میں ثابت کیا ہے ۔

سابق چیئرمین پی سی بی رمیز راجا کا کہنا تھا کہ پاکستانی ٹیم  نے فرسٹ ورلڈ کی ٹیموں کو آنکھیں دکھا کر ہرایا ہوا ہے۔  آج کے نوجوانوں کو موبائل فونز  چھوڑ کر میدان آباد کرنے چاہیئں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین نے خواتین کرکٹ سے متعلق کہا کہ پاکستان کی خواتین کرکٹ ٹیم بہت اچھا کھیل رہی ہے۔ملک میں ویمن کرکٹ کو فروغ دینے  کے اقدامات کرنا چاہیئے ۔

سوشل میڈیا  پر کرکٹ سے متعلق چلتے ہوئے ٹرینڈ سے رمیز راجا کا کہنا تھا کہ لوگ سوشل میڈیا پر جھوٹی باتیں کرکے عزت اچھالنے میں لگے ہوئے ہیں ،اس سے پرہیز کیا جانا ضروری ہے ۔

متعلقہ تحاریر