خبروں کی تصدیق کے لیے ٹوئٹر، اے پی اور رائٹرز کے درمیان معاہدہ

ٹوئٹر انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ہم غلط خبروں کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ایک جنگ کا آغاز کررہے ہیں۔

غلط معلومات کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر کی انتظامیہ ، ایسوسی ایٹڈ پریس(اے پی) اور نیوز ایجنسی رائٹرز کے درمیان خبروں کی تصدیق کا معاہدہ طے پر گیا ہے۔

ٹوئٹر انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ہم غلط خبروں کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ایک جنگ کا آغاز کررہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

فیس بک کی سابق ملازمہ کو خاموش رہنے کے لیے بڑی رقم کی پیشکش

ٹوئٹر انتظامیہ نے غیر تصدیق شدہ اور جعلی معلومات کی روک تھام کے لیے روراں سال کے شروع میں اپنی ویب سائٹ پر “برڈواچ” کے نام سے پروگرام کا آغاز کیا تھا۔

ٹوئٹر انتظامیہ نے “برڈواچ” کے تحت اپنے صارفین پر بھی زور دیا ہے کہ وہ ویب سائٹ پر جعلی خبروں کی نشاندہی کرنے میں ان کی مدد کریں۔ تاہم اپنی کوششوں کو عملی جامہ پہنانے اور خبروں کی درستگی کو برقرار رکھنے کے لیے ٹوئٹر نے اے پی اور رائٹرز کے ساتھ ایک معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔

ٹوئٹر کے ترجمان کے مطابق شراکت داری معاہدے کے تحت ٹوئٹر اپنی ویب سائٹ پر درست معلومات کو جمع کرنے کے لیے نیوز ایجنسیز کو باضابطہ طور پر تکنیکی سہولیات فراہم کرئے گا۔

رائٹرز کے سربراہ ہیزل بیکر کا کہنا ہے کہ صارف کے تیار کردہ کنٹنٹ کو غیرجانبدارانہ مہارت اور اعتماد سے روزانہ کی بنیاد پر دیکھنا رائٹرز کی ذمہ داری ہے۔

ایسوسی ایٹڈ پریس کے گلوبل بزنس ڈویلپمنٹ کے وائس پریذیڈنٹ ٹام جونزیوسکی کا کہنا ہے کہ ہم بہت زیادہ خوشی محسوس کررہے ہیں کہ اب ہم ٹوئٹر کے ساتھ مل کر حقائق پر مبنی خبروں کو تلاش کریں گے اور غلط معلومات کو روکیں گے۔

Facebook Comments Box