کیا سورج کو مدھم کرکے عالمی درجہ حرارت میں کمی لائی جاسکتی ہے؟

آئندہ 5سال میں کرہ ارض کا درجہ حرات 1.5ڈگری بڑھنے کا خدشہ ، ماہرین نے شمسی جیو انجینئرنگ کے ذریعے سورج کو مدھم کرنے کا منصوبہ پیش کردیا، خصوصی جہازوں کے ذریعے فضا میں کیمیکل چھڑکے جائیں گیے،مخالفین کا ممکنہ تباہ کن اثرات کے پیش نظر منصوبے پر پابندی کامطالبہ

کیا سورج کو مدھم کرنا عالمی درجہ حرارت کو کم کرنے میں مدد کر سکتا ہے؟  یہ سائنس فکشن کی طرح لگ سکتا ہے، لیکن کچھ لوگ بڑھتے ہوئے درجہ حرارت کو روکنے کے لیے شمسی جیو انجینئرنگ ٹیکنالوجی کو تلاش کر رہے ہیں۔

 ان کا کہنا ہے کہ یہ ٹیکنالوجی نسبتاً سستی اور آسان ہے جبکہ مخالفین خبردار کررہے ہیں  کہ یہ تباہ کن ہو سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ٹک ٹاک برطانیہ میں خبروں کے حصول کا تیزی سے ابھرنے والا ذریعہ بن گیا

چین نے دنیا کی پہلی مکمل الیکٹرک کار "اپالو آر ٹی 6 ” متعارف کروادی

ورلڈ میٹرولوجیکل آرگنائزیشن کا خیال ہے کہ اگر عالمی حدود کی خلاف ورزی جاری رہی تو اگلے 5 سالوں میں کرہ ارض 1.5 ڈگری سینٹی گریڈ تک گرم ہو سکتی  ۔اس خطرے سے نمٹنے کے لیے 16 ماہرین کا ایک کلائمیٹ اوور شوٹ کمیشن شروع کیا گیا تھا تاکہ سورج کی روشنی کو مدھم کرنے جیسی کسی نئی ٹیکنالوجی کو دیکھا جا سکے۔

اس حوالے سے ایک ٹیکنالوجی”اسٹراٹو اسفیرک ایروسول انجکشن “(ایس اے آئی) زیرغور ہے جس میں سورج کی حرارت کو کم کرنے کے لیے فضا میں کیمیکل چھڑکا جاتا ہے جس کے بعد آسمان آتش فشاں پھٹنے کے بعد کی طرح تاریک ہوجاتا ہے ۔

ماہرین کا خیال ہے کہ سالانہ چند ارب ڈالر کی لاگت سے  خصوصی طیاروں کے ذریعے یہ کام ممکن بنایا جاسکتا ہے ۔ماہرین کا خیال ہے کہ اگر کوششیں جاری رکھی جائیں تو  ایس اے آئی اوسط عالمی درجہ حرارت کو روک سکتا ہے۔

ایس اے آئی مسئلے کا حل نہیں اس پر پردہ ڈالنے کے مترادف ہے۔مخالفین

لیکن اس ٹیکنالوجی  کے مخالفین کا کہنا ہے کہ ایس اے آئی صرف اس مسئلے  پر پردہ ڈالے گا ، اسے حل نہیں کرے گا۔کچھ سائنس دان اس تجربے کے ممکنہ اثرات سے اتنے پریشان ہیں کہ ان کا خیال ہے کہ اس  تحقیق کو بند کرکے  کھلی فضا میں اس قسم کے تجربات پر پابندی لگادینی چاہیے ۔

شمسی جیوانجینئرنگ کے مخالفین کا خیال ہے کہ اس قسم کے تجربات کے نتیجےمیں بارش  کے نظام میں تبدیلیاں آسکتی ہیں جو عالمی بھوک میں اضافے کا سبب بن سکتی ہیں۔ مخالفین کایہ بھی کہنا ہے کہ اگر اس  ٹیکنالوجی کا استعمال اچاک بند کردیا گیا تو بے قابو درجہ حرارت میں اضافہ ہوگا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ اس قسم کے تجربات ماحول کو آلودہ کرنے والوں کو  غیرضروری گرین لائٹ مہیا کردیں گے۔

اگر شمسی جیو انجینئرنگ عملی طور پر ممکن ہے تو اس کا کنٹرول کس کے پاس ہوگا؟

ناقدین نے خبردار کیا ہے کہ اصول بنانے کی ابتدائی کوششوں میں ہی اس ٹیکنالوجی پر کام رک جانے کا امکان ہے ، ٹیکنالوجی کے استعمال کی صورت میں اس بات کا زیادہ امکان  ہے کہ ایک طاقتور ریاست یا فرد قیادت اپنے ہاتھ میں لیکر  ممکنہ طور پر دوسروں کو نقصان پہنچا سکتا ہے۔

جینوس پاسٹر کی  تنظیم  سی 2جی ٹو نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ موسمیاتی تبدیلی کے جلد ہی تباہ کن اثرات ہوسکتے ہیں۔اس کا مطلب ہے کہ آب و ہوا کو ٹھنڈا کرنے کے مزید انتہائی طریقے اب میز پر ہیں  لہٰذا یہ زیادہ ضروری ہے کہ   دنیا ان کو منظم کرنے کے طریقوں پر متفق ہوجائے۔

Facebook Comments Box