برطانوی فوج کے سربراہ کا پاکستان کی کاوشوں کا اعتراف

جنرل نک کارٹر نےکہا کہ انہیں افغانستان کے معاملے پر پاکستانی چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کی بات پر بھروسہ ہے۔

برطانوی مسلح افواج کے سربراہ جنرل سر نک کارٹر نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں پاک فوج پر پورا اعتماد ہے۔ پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ایک سچے انسان ہیں، اگر وہ کہہ رہے ہیں کہ وہ ایک مستحکم افغانستان چاہتے ہیں تو انہیں ان کی بات پر بھروسہ ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی اینکر پرسن یلدا حکیم نے انٹرویو کے دوران برطانوی مسلح افواج کے سربراہ جنرل سر نک کارٹر سے پاکستان میں دہشتگردوں اور حقانی نیٹ ورک کے لوگوں کے مبینہ محفوظ ٹھکانوں کے بارے میں سوال کیا۔ اینکر پرسن نے افغانستان کے معاملے پر پاکستان کے کردار سے متعلق بھی سوال پوچھا۔ جس پر برطانوی جنرل نے جواب دیا کہ پاکستان نے مشکل ترین چیلنج کے ساتھ ایک طویل عرصہ گزارا ہے، پاکستان کی سرزمین پر 35 لاکھ مہاجرین نے پناہ لی۔ جنرل سر نک کارٹر نے کہا کہ جب ایک سرزمین پر اتنے سارے لوگ ہوں تو یہ کنٹرول کرنا مشکل ہوجاتا ہے کہ ان میں سے کون دہشتگرد ہے۔

جنرل سر نک کارٹر نے واضح الفاظ میں کہا کہ اگر پاکستانی چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ یہ کہہ رہے کہ ہیں وہ ایک مستحکم اور معتدل افغانستان چاہتے ہیں تو واقعی یہ بات سچ ہے اور اس میں کوئی دو رائے نہیں۔

یہ بھی پڑھیے

افغان طالبان کے لیے انتخابات اصل امتحان

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان نے اب سرحد پر باڑ بنائی ہے اور نقل و حرکت پر کڑی نظر رکھی ہوئی ہے۔

دوسری جانب آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے گزشتہ روز پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول کے دورے پر کہا تھا کہ وہ توقع کرتے ہیں کہ طالبان خواتین اور انسانی حقوق کے حوالے سے عالمی برادری سے کئے گئے اپنے وعدے پورے کریں گے۔

Facebook Comments Box