چھ فلسطینی قیدی اسرائیلی جیل سے فلمی انداز میں فرار

فلسطینی قیدی اسرائیل کی جدید ترین جیل "جلبوع" جوانتہائی جدید ترین سیکیورٹی آلات سے لیس ہونے کی وجہ سے (سیف ) بھی کہلاتی ہےسے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے

صیہونی فو ج کی جانب سے جاری کردہ بیان میں اعلان کیا گیا ہے کہ عمر قید کاٹنے والے چھ فلسطینی قیدی جس میں سے ایک اسلامی مزاحمتی تحریک جہاد اسلامی کے عسکری ونگ الاقصیٰ مارٹیئرز بریگیڈ کے سابق کمانڈر زکریا زبیدی اور ان کے پانچ ساتھی  شامل تھے اسرائیل کی جدید ترین سیکیورٹی آلات سے لیس جیل توڑ کر فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں جن کی تلاش جاری ہے۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ فلسطین کے شمالی شہرجنین میں قائم اسرائیل کی جدید ترین جیل “جلبوع” جوانتہائی جدید ترین سیکیورٹی آلات سے لیس ہونے کی وجہ سے (سیف ) بھی کہلاتی ہے سے فلمی اندازمیں سرنگ کے ذریعے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں،  اسرائیل کے معروف انگریزی اخبار کے مطابق فلسطینی قیدیوں میں سے پانچ قیدی اسرائیلی باشندوں پر قاتلانہ حملے میں شامل ہیں جبکہ الاقصیٰ مارٹیئرز بریگیڈ کے سابق کمانڈر زکریا زبیدی اسرائیل کی سلامتی کے خلاف سرگرمیوں میں ملوث ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے مڈل ایسٹ آئی  نےاسرائیلی جیل سے فرار ہونےوالے فلسطینی قیدیوں کے فرار کو ہالی وڈ کی مووی” دی شاشنک ریڈیمپشن”  سے تشبیہ دیا ہے، اپنی رپورٹ میں اس کو بالکل فلمی انداز کا فرار قرار دیتے ہوئے اسرائیلی سیکیورٹی اداروں کی تضحیک کی ہے، ایسی ہی تضحیک آمیزرپورٹ برطانیہ کے معروف اخبار “ڈیلی میل ” نے بھی شائع کی  اوراس کو ہالی وڈ کی مووی سے تشبیہ دی۔

یہ بھی پڑھیے
فیس بک ملازمین فلسطینیوں کے حق میں

وا ضح رہے کہ تمام چھ فلسطینی قیدیوں نے اپنے غسل خانے کے فرش میں انتہائی تنگ سرنگ بنا کروہاں سے فرار ہونے کا راستہ بنایا تھا، سرنگ کا دوسرا سرا بظاہر جیل کے باہر سڑک کے پاس نکلتا ہے۔

فلسطینی قیدیوں کے فرارپر صیہونی ریاست کے وزیراعظم نفتالی بینیٹ نےمتعلقہ ادارے کے وزیرسے بریفنگ لیتے ہوئے اس کو سنگین غفلت قرار دیا ہے جبکہ دوسری جانب  مقبوضہ فلسطین میں صیہونی ریاستی دہشتگردی کے خلاف برسرپیکار اسلامی مزاحمت  کی تنظیم حماس کے ترجمان فوزی برہوم نے کہا کہ یہ ایک ’عظیم فتح‘ ہے جو ثابت کرتی ہے کہ ’دشمن کی جیلوں کے اندر ہمارے بہادر سپاہیوں کے عزم اور ارادے کو شکست نہیں دی جا سکتی۔‘

Facebook Comments Box