ایف بی آر  ٹی ٹی ایس کے تحت شوگر مافیا سے کتنا ریونیو وصول کیا؟

پہلے چھ ماہ(جولائی تا دسمبر)میں 11 فیصد اضافے کے ساتھ 32.43 ارب روپے کا ریونیو اکٹھا کیا گیا

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم (ٹی ٹی ایس )کو نافذ العمل کر کے  شوگر سیکٹر سے ریونیو اکٹھا کرنے میں نمایاں کامیابی حاصل کرتے ہوئے  رواں مالی سال 2021-22  کے پہلے چھ ماہ (جولائی تا دسمبر) میں 11 فیصد اضافے کے ساتھ 32.43 ارب روپے  کا ریونیو  اکھٹا کر لیا۔

ترجمان ایف بی آر کی جانب سے جاری بیان کے مطابق  فیڈرل بورڈ آف ریونیوٹی ٹی ایس کو نافذ العمل کر دیا جس کے تحت رواں مالی سال 2021-22 کے پہلے چھ ماہ(جولائی تا دسمبر)میں 11 فیصد اضافے کے ساتھ 32.43 ارب روپے کا ریونیو اکٹھا کر لیا اس کے مقابلے میں گزشتہ سال اس مدت میں 29.30 ارب روپے ریونیو اکٹھا ہوا تھا۔

یہ بھی  پڑھیے 

سینیٹ کمیٹی کا ایف بی آر کو جائیداد کی نئی ویلیو ایشن واپس لینے کا حکم

ایف بی آر نے 40 شہروں کے لیے پراپرٹی ویلیو ریٹ بڑھا دیئے

شوگر سیکٹر کی ڈیجیٹل مانیٹرنگ کی بدولت حوصلہ افزا نتائج اس بات کا مظہر ہیں کہ ٹی ٹی ایس ٹیکس چوری کی روک تھام میں اپنا فعال کردار ادا کر رہا ہے اور اس کی مدد سے ریونیو کلیکشن میں اضافہ ہو رہا ہے۔ ٹی ٹی ایس آلات کی تنصیب کا آغاز اکتوبر اور نومبر 2021 میں ہوا تھا اور تمام شوگر ملز کو چینی کے ہر تھیلے پر چسپاں کرنے کیلئے ایپلیکیٹرز بمع ٹیکس سٹیمپ مہیا کر دیئے گئے تھے۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے بذریعہ ایس ٹی جی او نمبر 5 ، 2021 مطلع کیا تھا کہ کسی پروڈکشن سائٹ، مینوفیکچرنگ فسیلٹی سے ٹیکس سٹامپ اور منفرد شناختی نشان ( UIMs )لف کئے بغیر چینی کے تھیلے نکالنے کی اجازت نہیں ہوگی تاہم ٹی ٹی ایس کا باضابطہ افتتاح وزیر اعظم پاکستان نے 23 نومبر 2021 کو کیا تھا۔

Facebook Comments Box