الیکشن کمیشن نے مسلم لیگ (ق) کے انٹراپارٹی انتخابات روک دیے

الیکشن کمیشن میں چوہدری شجاعت حسین کی جانب سے درخواست دائر کی گئی تھی جس میں استدعا کی گئی تھی کہ مسلم لیگ ق کے پارٹی الیکشن رکوائے جائیں۔

الیکشن کمیشن نے چوہدری شجاعت کو مسلم لیگ ق کا صدر اور طارق بشیر چیمہ کو چوہدری شجاعت حسین کی درخواست کی اگلی سماعت تک سیکرٹری جنرل برقرار رکھنے کا حکم سنا دیا۔آئندہ سماعت 16 اگست کو ہوگی۔

الیکشن کمیشن میں چوہدری شجاعت حسین کی جانب سے درخواست دائر کی گئی تھی جس میں استدعا کی گئی تھی کہ مسلم لیگ ق کے پارٹی الیکشن رکوائے جائیں۔

یہ بھی پڑھیے

موروثی سیاست کی انتہا: شاہ محمود نے بیٹے کی خالی نشست پر بیٹی کو ٹکٹ دلوادیا

چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ نے درخواست کی سماعت کی۔

چوہدری شجاعت حسین کے وکیل نے الیکشن کمیشن کوبتایا کہ سینٹرل ورکنگ کمیٹی کی جانب سے ازسرنو الیکشن شیڈول کا اعلان کیا گیا جو غیر قانونی ہے کیونکہ مسلم لیگ ق میں سینٹرل ورکنگ کمیٹی وجود ہی نہیں رکھتی نہ ہی پارٹی ممبران کو اجلاس کا اعلامیہ ملا ۔

وکیل کا کہنا تھا کہ اجلاس میں شرکت کرنے والے ممبران کی کوئی فہرست نہیں دی گئی۔انہوں نے اس اجلاس کو غیر قانونی قرار دیا۔

وکیل کا دلائل میں کہنا تھا کہ 28 جولائی کو سوشل میڈیا پر بغیر دستخط شدہ خط سامنے آیا جس سے معلوم ہوا کہ پارٹی کی مرکزی ورکنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس میں پارٹی کے صدر اور جنرل سیکرٹری کو برطرف کر دیا گیا۔وکیل نے بتایا کہ سینٹرل ورکنگ کمیٹی کے پاس کوئی اختیار نہیں کہ وہ پارٹی صدر کو برطرف کرے۔پارٹی صدر اس اس صورت میں ہٹ سکتا ہے کہ اگر وہ مستعفیٰ ہوجائے۔

چوہدری شجاعت حسین کے وکیل نے بتایا کہ اس اجلاس میں صدر اور جنرل سیکرٹری کے الیکشن کا اعلان بھی کیا گیا۔

چوہدری شجاعت کے وکیل نے الیکشن کمیشن سے استدعا کی کہ جن ممبران نے خود کو سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا ممبر ظاہر کیا ان کے خلاف کارروائی کی جائے۔وکیل کا موقف تھا کہ مسلم لیگ ق کے پہلے منتخب ہونے والےصدر اور جنرل سیکرٹری اب بھی برقرار ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ مسلم لیگ ق کے آخری الیکشن جنوری 2021 میں ہوئے جس میں تمام عہدیدار بلا مقابلہ منتخب ہوئے، پارٹی الیکشن ہر5 سال بعد ہوتا ہے، کوئی عہدیدار انتقال کر جائے یا استعفیٰ دے تو عہدے سے ہٹ سکتا ہے۔

الیکشن کمیشن نے چوہدری شجاعت حسین کے وکیل کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ سنایا کہ آئندہ سماعت تک چوہدری شجاعت مسلم لیگ ق کے صدر اور طارق بشیر چیمہ پارٹی کے سیکرٹری جنرل برقرار رہیں گے۔ الیکشن کمیشن نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے مقدمہ کی سماعت 16 اگست تک ملتوی کردی۔

Facebook Comments Box