یروشلم میں برفانی طوفان نے تمام مذہبی مقامات کو ڈھک دیا

مسجد اقصیٰ، ڈوم آف راک اور ویسٹرن وال نے برف کی چادر اوڑھ لی ہے۔

موحولیاتی تبدیلی کے باعث دنیا بھر کا موسم کروٹ بدل رہا ہے۔ موسم سرما کے غیرمعمولی برفانی طوفان نے یروشلم کو بھی لپیٹ میں لے لیا ہے۔ برف کے گالوں نے تمام مذاہب کی عبادت گاہوں کو سفیدی میں نہلادیا۔

تین اہم مذاہب کے مقدس مقامات کے شہر یروشلم میں برسوں بعد برفباری ہوئی ہے۔ مسلمانوں کے قبلہ اول سمیت عیسائی اور یہودی عبادت گاہیں بھی برف کی چادر سے ڈھک گئیں۔

چھ سال بعد ہونے والی برفباری سے مسجد اقصیٰ خوبصورت منظر پیش کرنے لگی ہے۔ ڈوم آف راک (قبۃ الصخرہ) کے گرد شہریوں نے برفباری کا مزہ لیا اور تصاویر بنوائیں۔

برفانی طوفان کے باعث یروشلم کی مشہور ویسٹرن وال کے گرد بھی سفیدی چھاگئی۔

Xinhua

شہر میں کئی سینٹی میٹر تک برف پڑچکی ہے جس سے نظام زندگی متاثر ہورہا ہے۔ مختلف علاقوں میں اسکول اور دفاتر بھی بند ہیں۔

دوسری جانب امریکی ریاست ٹیکساس میں آنے والے طوفان کو تاریخ کا بدترین برفانی طوفان قرار دیا جارہا ہے۔ اب تک 21 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں جبکہ 3 روز سے ریاست میں بجلی بھی منقطع ہے۔

Planet Labs

یہ بھی پڑھیے

انڈیا میں نظام الدین اولیاء کے مزار پر ‘صوفی بسنت’ کا انعقاد

شام، لبنان اور اردن میں بھی برفانی طوفان نے تباہی مچادی ہے۔ دمشق کے چند علاقوں میں 15 سینٹی میٹر سے زائد برفباری ریکارڈ کی گئی ہے۔

Facebook Comments